WORLD SHIA NEWS

 

صفحہ اول         شہ سرخیاں         ساری خبریں           تبصرے          مضامین          ہم سے رابطہ

 

 

 

 

 

 

 

 

 

موصل آپریشن میں صرف عراقی فوجیں اور عوامی رضاکار شریک ہیں ,غیر ملکی افواج کا کوئی کردار نہیں ہے۔

عراقی افواج نے داعش کا مضبوط گڑھ سمجھی جانےوالی موصل یونیورسٹی کو زبردست معرکے کے بعد آزاد کرالیا

بغداد میں ایک کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم حیدر العبادی نے کہا کہ مقبوضہ علاقوں کی آزادی، دہشت گردی کے خلاف جنگ اور بے گھر ہونے والوں کی وطن واپسی ان کی حکومت کی اولین ترجیح ہے۔
داعش کے خلاف جنگ کے بعد عراق کی صورتحال کے بارے میں ہونے والی اس کانفرنس میں، ایران، لبنان، مصر، شام اور اردن کے سرکاری عہدیدار بھی شریک ہیں۔
عراقی وزیراعظم نے کہا کہ اب یہ بات واضح ہوچکی ہے کہ عراقی افواج ، داعشی دہشت گردوں سے اپنے مقبوضہ علاقوں کو واپس لینے کی توانائی رکھتی ہیں۔
انہوں نے کہا کہ موصل آپریشن میں صرف عراقی فوجیں اور عوامی رضاکار شریک ہیں اور غیر ملکی افواج کا کوئی کردار نہیں ہے۔

عراقی افواج نے داعش کا مضبوط گڑھ سمجھی جانےوالی موصل یونیورسٹی کو زبردست معرکے کے بعد آزاد کرالیا ہے - موصل پر قبضہ کرنے کے بعد سے داعش نے اس یونیورسٹی کو اپنا اصلی مرکز بنا رکھا تھا- داعش نے یونیورسٹی پر قبضے کے دوران وہاں کی لائـبریریوں میں کتابوں کے ہزاروں نسخوں کو نذر آتش کردیا تھا اور تیس ہزار طلبا تعلیم سے محروم ہوگئےتھے - موصل یونیورسٹی کی آزادی کو عراقی افواج کی بڑی کامیابی قراردیا جارہا ہے -

عراق کی انسداد دہشت گردی فورس نے موصل کے مغربی ساحل پر واقع یارمجہ محلے کو بھی دہشت گردوں کے قبضے سے آزاد کرالیا ہے - دوسری جانب عراقی افواج نے صوبہ الانبار کے مغرب میں عراقی فوجی اڈے پر داعش کے حملے کو ناکام بنادیا ہے - خبروں میں بتایا گیا ہے کہ داعش کا خود کش حملہ آورعراقی فوج کے ستائیسویں ڈویژن کے ہیڈکوارٹر پر حملہ کرنا چاہتا تھا لیکن عراقی فوجیوں نے اڈے تک پہنچنے سے پہلے ہی حملہ آور کی گاڑی پر حملہ کرکے اس کو منہدم کردیا -  عراقی فوج نے بعقوبہ کے مشرق میں بھی داعش کے پانچ ٹھکانوں کو تباہ کردیا ہے-